چہرے کے داغ دھبے دور کرنا

چہرے کے داغ دھبے دور کرنا

چہرے کے کیل مہاسے اور داغوں کا کامیاب علاج لاہور چہرے پر کیل دانے اور داغ دھبے اس لیے برے لگتے ہیں کیونکہ یہ انسان کا ڈیش بورڈ ہے، اور ہر کسی کی پہلی نظر چہرے پر پڑتی ہے، ورنہ دانے تو کمر، چیسٹ اور سر پر بھی بنتے ہیں، اور دانے ہر عمر کے لوگوں کو نکل سکتے ہیں لیکن پہلے یہ دیکھنا چاہیئے کہ دانے بن کس وجہ سے رہے ہیں؟ پھر ان کے علاج کی طرف جانا چاہیئے، یہ نہیں کہ ہر کسی کا ایک ہی علاج شروع کر دیا جائے۔ کیونکہ انسان جب بچپن سے جوانی میں قدم رکھتا ہے تو جسم میں ہارمونز کی زیادتی یا ردوبدل سے دانے نکلنے لگتے ہیں، غذا کے غیر متوازن ہونے کی وجہ سے بھی دانے بن سکتے ہیں، خون میں فاسد مادوں کی موجودگی بھی دانوں کا باعث بن سکتی ہے، کولیسٹرول فیٹی ایسڈز اور مردہ خلیوں کی وجہ سے بھی دانے بن سکتے ہیں، آپکی جلد چکنی ہے یا خشک اس چیز کا تعین بھی جوانی میں داخل ہونے کے بعد ہوتا ہے، خشک جلد والوں کو ذرا کم ان مسائل سے دوچار ہونا پڑتا ہے،اور چکنی جلد والے ان دانوں سے زیادہ متاثر ہوتے ہیں، کیل مہاسے دانوں سے پریشان مت ہوں بلکہ اچھا ہے کہ آپ کے جسم کی قوت مدافعت اچھا کام کر رہی اور فاسد مواد کو باہر کھینچ لائی، کیونکہ اگر یہ فاسد مواد جسم میں رہ جائے تو کینسر جیسے موذی مرض اور کسی عضو کے فیل ہونے کا باعث بن سکتا ہے۔ بلکہ میرے خیال میں آپکو اللہ تعالی کا شکر ادا کرنا چاہیئے کہ آپکا اندرونی سسٹم بڑی طاقت میں ہے، بس اب ان دانوں کا انکی ہییت کے مطابق علاج کر لی جیئے۔ ہر قسم کے کیل دانے والوں کے لیے ضروری ہدایات۔ دانوں سے جلدی جان چھڑانے کے لیے صفائی کا زیادہ سے زیادہ خیال رکھیں، اپنا تولیہ اور تکیہ علیحدہ رکھیں اور انکو روزانہ دو سے تین گھنٹے دھوپ میں لازمی رکھیں، پانی ہمیشہ بوائل کر کے رکھیں اور صرف نیم گرم پانی سے دن میں تین سے پانچ مرتبہ چہرہ دھوئیں، تاکہ مسامات سے بیکٹریا اور زائد چکنائی نکل جائے، اورروزانہ کم از کم دو لیٹر بوائلڈ پانی پیئں، اور معتدل مزاج غذا لیں یہ دانوں سے چھٹکارا پانے کے لیے بہت ضروری ہے، روسٹڈ اشیأ سے مکمل پرہیز ضروری ہے۔ پودینہ کے پتوں سے دانوں کا علاج ۔روزانہ بلا ناغہ آٹھ سے دس پودینے کے پتوں کا قہوہ بنا کر پیئں، کیونکہ ہو سکتا ہے آپ کے چہرے پر دانے تیزابیت یا ہارمونل ردوبدل سے نکل رہے ہوں کیونکہ پودینہ تیزابیت اور اینڈروجن ہارمونز کو کنٹرول کرنے کے لیے قدرتی اینٹی آکسیڈنٹ ہے۔ دانوں کے لیے ماسک۔ ملتانی مٹی دو کانے کے چمچ۔ عرق گلاب دو کھانے کے چمچ۔ صندل وڈ پاؤڈر دو کھانے کے چمچ۔ تینوں اجزأ ہم وزن لے کر مکس کرکے ابٹن بنا لیں اور چہرے پر لگا دیں جب سوکھ جائے تو نیم گرم پانی سے چہرہ دھو لیں۔ ہفتے میں ایک دفعہ یہ ماسک لگائیں، رنگ گورا کرنے، سکن ٹائٹ کرنے اور دانوں سے چہرہ صاف کرنے کے لیے آزمودہ ٹوٹکہ ہے۔ ہر قسم کی جلد کے دانوں اور داغ دھبوں کا مکمل علاج۔ ایلوویرا کا گودا دو کھانے کے چمچ۔ پودینہ کے پتے دس سے پندرہ عدد۔ دونوں کو گرائنڈ کر کے کریم کی طرح بنا لیں اور رات کے وقت چہرے پر لگا دیں اور صبح اٹھ کر نیم گرم پانی سے چہرہ دھو لیں، انشأاللہ تین دن میں دانے مندمل ہو جائیں گے اور نئے دانے بننا رک جائیں گے۔مکمل علاج کے لیے مسلسل ایک ماہ لگاتار لگائیں ہر قسم کے کیل مہاسے، چھائیوں اور داغ دھبوں کے لیے بے مثال ٹوٹکہ ہے۔ نوٹ: ایلوویرا ہمیشہ تازہ استعمال کرنا چاہیے کیونکہ جب ایلوویرا کا گودا اپنے اوپر موجود موٹی تہ سے باہر آ جاتا ہے تو ایک گھنٹہ بعد اس میں بیکٹریا پیدا ہو جاتا ہے، ڈبہ پیک ایلوویرا جل کا رواج تو چل نکلا لیکن وہ نقصان دہ ہو سکتا ہے اور ایلوویرا دن کے وقت لگانے سے رنگ خراب ہوتا ہے، اس لیے ایلوویرا صرف رات کو لگانا چاہیے۔ آئندہ بھی ہم آپکو بتاتے رہیں گے صدیوں پرانے آزمودہ ٹوٹکے اور حکمت کے چھپے راز۔ ہماری ہر نئی پرانی ٹپس کی ہر پوسٹ کا لنک ہمارے اس فیس بک پیج پر موجود ہے۔ وزٹ کریں۔

Categories

Comments are closed.